June 20, 2018
You can use WP menu builder to build menus

اسلام آباد میں ٹی سی ایس کے ویزا سروس آفس نے فیملی ویزا پراسس کے نام پر لوٹ کا بازار گرم کر دیا۔ درخوست گزاروں کو بار بار دفتر کے چکر لگوانا اور فی چکر 5000 سے 6000 پزار روپےسروس فیس وصول کرنا معمول بن گیا۔ ایک سائل کو کم از کم 6 چکر لگوائے جاتے ہیں۔ تمام کاغذات ایک دفعہ پورے کرنے کی بجائے ایک ایک کر کے جمع کرتے ہیں تاکہ زیادو چکر لگیں اور زیادہ پیسے بٹور سکیں۔ اگر کسی جمع شدہ کاغد کی تاریخ اجرا کو ایک سال ہو جائے تو ٹی سی ایس آفس کے وارے نیارے ہو جاتے ہیں۔ ایمبیسی کو ضابطوں سے ہٹ کے اپنے ضابطے بنا لئے۔ ایک درخواست گزارکو اگر گجرات یا منڈی بہاوالدین سے آنا پڑے تو اسکو ایک حاضری کم از کم 10000 روپے میں پڑتی ہے۔ ایک درخواست پرٹی سی ایس جو چکر لگواتا ہے٫ 1۔ کاغذات کو ایمبیسی سے تصدیق کروانا، 2۔ تصدیق شدہ کاغذات واپس لینا، 3۔ درخواست ویزا جمع کرانا،4۔ درخواست جمع ہونے کی رسید واپس لینا۔ 5۔ جمع شدہ پاسپورٹ واپس لینا۔ 6۔ انکوائری کے بعد پاسپورٹ دوبارہ جمع کروانا۔ 7۔ ویزہ لگنے کے بعد پاسپورٹ واپس لینا۔وغیرہ وغیرہ اگر کوئی اضافی یا ضروری دوبارہ جمع کروانا ہو تو 2 مزید چکر لاگانے ہوں گے۔ کاغذ  پاکستانی کمیونٹی سپین کے سیاسی، سماجی، مذہبی لیڈرزکیا ان مسائل کو حل کرنے کو چیلنج قبول کرنے کو تیار ہیں٫؟۔ 

Comments are closed.

error: Content is protected !!