February 22, 2017
You can use WP menu builder to build menus

admin

بارسلونا ایرپورٹ ٹرمینل 2 کینٹین: نیا ٹھیکہ، آخری تاریخ 10 اپریل۔ طاہر فاروق

Feb 22, 2017

بارسلونا ٹیکسی ورکر رہنما طاہر فاروق وڑائچ کے مطابق ٹرمینل 2 میں ٹیکسی ریسٹ ایریا میں واقع کینٹین کا معاہدہ ختم ہونے جا رہا ہے۔ اور اس کیلئے ایرپورٹ انتظامیہ نیا ٹینڈر جاری کرنے جا رہی ہے۔ کینٹین کا ٹھیکہ حاصل کرنے کے خواہشمند 10 اپریل تک اپنی پیشکش جمع کرواسکتے ہیں۔ طاہر فاروق کے مطابق یہ پاکستانی کمیونیٹی کے کاروباری حضرات کیلئے ایک اہم موقع ہے۔ کہ وہ ایک انتہائی مصروف کینٹین کا ٹھیکہ حاصل کرسکیں۔ اس سے جہاں مزید معیاری غذا ڈرائیورز کو حاصل ہو گی وہیں 1400 کے قریب مسلم ڈرائیورز کیلئے بھی مینو حلال کا مسئلہ حل ہو سکے گا۔ طاہر فاروق نے آئینا حکام سے مزید مطالبہ کیا کہ، آئندہ ٹھیکہ جس کو بھی الاٹ کیا جائے اسے مینو حلال رکھنے کا پابند کیا جائے۔ طاہر فاروق کے مطابق جو بھی پاکستانی بھائی ایرپورٹ ٹرمینل 2 ٹیکسی ریسٹ ایریا کی کینٹین کا ٹھیکہ حاصل کرنا  چاہے۔ وہ ٹرمینل 1 پر واقع آئینا دفاتر سے مزید تفصیلات کے لیے رجوع کر سکتا ہے۔

Read More

بارسلونا ایرپورٹ: 108 ٹیکسی ڈرائیورز کے خلاف شکایات درج

Feb 22, 2017

یکم جنوری 2017 سے اب تک 108 ٹیکسی ڈرائیور کریڈٹ کارڈ سے کرایہ کی وصولی سے انکار کرچکے ہیں۔ اس بات کا انکشاف آئینا حکام نے بارسلونا ٹیکسی سیکٹر کے نمائندوں سے میٹنگ میں کیا۔ آئینا کے مطابق ان تمام ڈرائیورز کے خلاف شکایات کا اندراج کیا جا چکا ہے۔ جن پر متعلقہ ادارے ایکشن لیں گے۔ میٹنگ میں شریک ورکرز کے نمائندے طاہر فاروق کے مطابق آئینا حکام نے ٹیکسی ریسٹ ایریا میں خاص صفائی رکھنے کی اپیل بھی کی ہے۔ میٹنگ میں طاہر فاروق کی جانب سے ٹرمینل 2 پر ملٹی کلچرل ثقافتی مرکز کا مطالبہ بھی کیا گیا۔ آئینا حکام کے مطابق اس سے قبل بھی یہ مطالبہ سامنے لایا جا چکا ہے۔ اور ہم اس پر غور کریں گے۔

Read More

سپین: 3 دن افریقہ سے آئی دھول کا نشانہ بنا رہے گا

Feb 22, 2017

سپین کے محکمہ موسمیات کے مطابق تمام ملک 21 تا 23 فروری افریقہ سے آنے والے دھول بھرے بادلوں کے نشانہ پر رہے گا۔ جس کی وجہ سے ہوا میں دھول اور ریت کی بھاری مقدار کے باعث ماحولیاتی آلودگی میں اضافہ ہو گا۔ محکمہ موسمیات نے 23 فروری کو ملک میں بارش کی پیشین گوئی بھی کی ہے۔/بارسلونا ڈسٹ سینٹر

Read More

پاکستان قومی بچت سکیم: 113 ارب روپے کی سرمایہ کاری

Feb 22, 2017

سٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق جولائی سے دسمبر تک قومی بچت کی سکیموں میں 21 ٪ کمی کے بعد یہ سرمایہ کاری 113 ارب 56 کروڑ روپے رہ گئی ہے۔ یہ سرمایہ کاری گذشتہ سال، اسی عرصہ کے دوران کی گئی سرمایہ کاری سے 28 ارب روپے کم ہے۔ 

Read More

پاکستان سالانہ 75 کروڑ ڈالر مالیت کے موبائل فون درآمد کرتا ہے

Feb 22, 2017

پاکستان کا شمار دنیا کی بڑی سیلولر سروس استعمال کرنے والے ممالک میں کیا جاتا ہے۔ پاکستان سالانہ 75 کروڑ ڈالر مالیت کے موبائل فونز درآمد کرتا ہے۔ موبائل ایپلیکیشنز، ویڈیو چیٹنگ اور بہترین انٹرنیٹ کنکشن کے باعث صارفین میں جدید ٹیلیفون استعمال کرنے کا رحجان بڑھ رہا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر حکومت موبائل فونز کی اسمگلنگ کی روک تھام اور ٹیکسوں میں کمی کرے تو اس صنعت میں سرمایہ کاری بڑھ سکتی ہے۔ جبکہ مقامی سطح پر تیار ہونے والے سمارٹ فونز کی قیمتوں میں کمی واقع ہوگی۔ 

Read More

سپینش شناختی کارڈ کے اجراء میں تاخیر: وزیر داخلہ کا اعتراف

Feb 22, 2017

سپینش وزیر داخلہ جوان اگناسیو زوئیدو نے منگل کے روز سپینش سینیٹ میں ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے، ملک کے بعض دفاتر میں قومی شناختی کارڈ کے اجراء میں تاخیر کی تصدیق کی ہے۔ وزیر داخلہ کے مطابق کاستیون، ویعا ریال اور وینا روز کے دفاتر میں بعض غیرمعمولی وجوہات کے باعث شناختی کارڈ کے اجراء میں تاخیر ہو رہی ہے۔ انہوں نے ان وجوہات کو ختم کرنے اور شناختی کارڈ کے اجراء میں تاخیر کو ختم کرنے کی یقین دہانی کروائی۔/20منٹ

Read More

خواتین اور مردوں کی تنخواہوں میں فرق کا خاتمہ: سپینش پارلیمنٹ میں قرارداد منظور

Feb 22, 2017

سپینش قومی اسمبلی میں سوشلسٹ پارٹی کی ممبر اسمبلی کی قرارداد 339 ووٹوں سے منظور کر لی گئی۔ قرارداد میں حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ، وہ چھ ماہ کے عرصہ میں مردوں اور خواتین کے درمیان تنخواہوں میں موجود واضح فرق کو ختم کرنے کی کوشش کرے۔ ممبر اسمبلی کے مطابق سپین میں خواتین میں بیروزگاری کی بلند شرح پائی جاتی ہے۔ جس کی دیگر وجوہات کے خاتمہ کے ساتھ ساتھ تنخواہوں میں فرق کو ختم کرنا ضروری ہے۔/اٹلس

Read More

سپین حکومت: چار بچوں کے والدین کو خصوصی حیثیت دینے کا اعلان

Feb 22, 2017

سپین حکومت چار بچوں کے والدین کو خصوصی حیثیت  دے گی۔ ان خیالات کا اظہار وزیر سوشل سروسز دولورس مونسیرات نے قومی اسمبلی میں ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کیا۔ اس سے قبل پانچ بچوں کے والدین کو ملک کے سوشل سکیورٹی سسٹم میں خاص حیثیت حاصل ہے۔ وزیر کے مطابق خاص حیثیت دینے سے بچوں میں غربت کے خاتمہ اور ان کی دیکھ بھال کے حوالہ سے حکومت کی جانب سے ڈالے جانے والے حصہ میں بہتری آئے گی۔/یورپ پریس 

Read More

کتلان آزادی: سپینش صدر اور صوبائی صدر کی خفیہ ملاقات

Feb 22, 2017

لا وان گواردیا اخبار کے مطابق 11 جنوری کو سپینش صدارتی محل میں سپینش صدر راخوئی اور کتلان صدر پوئیج دے مونتے کے درمیان خفیہ ملاقات کا انکشاف کیا ہے۔ ملاقات ناشتہ پر ہوئی۔ جس میں پوئیج دے مونتے نے کتلونیا میں آزادی ریفرنڈم کے حوالہ سے راخوئی کی حمایت حاصل کرنے کی ناکام کوشش کی۔ جبکہ راخوئی نے 17 جنوری کو منعقد ہونے والی صوبائی صدور کی میٹنگ میں شریک ہونے کی درخواست کی۔ صوبائی صدر کی جانب سے میٹنگ میں شریک ہونے کی صورت میں شرکاء کو کتلان آزادی ریفرنڈم کے حوالہ سے بریفنگ دینے کا مطالبہ، سپینش صدر کی جانب سے مسترد کیے جانے پر صوبائی صدر نے میٹنگ میں شامل ہونے سے انکار کر دیا۔ صوبائی حکومت کے ترجمان نے کسی بھی قسم کی میٹنگ سے انکار کیا ہے۔/یورپ پریس 

Read More

سپینش طلباء کو سکالر شپ کی ادائیگی فوری کی جائے۔ وزیر تعلیم کے احکامات

Feb 22, 2017

وفاقی وزیر تعلیم سپین انیاگو میندیز، نے کہا  ہے کہ، طلباء کو سکالرشپ کی دوسری قسط کی ادائیگی فوری طور پر کی جائے گی۔ سپین حکومت نے 2016 میں طلباء کیلئے 1.41 ارب یورو بطور وظائف دینے کا اعلان کر رکھا ہے۔ جس کی دوسری اور آخری قسط کی ادائیگی میں تاخیر کا سامنا تھا۔ وزیر تعلیم کے مطابق سابق سوشلسٹ حکومت کی جانب سے پیدا کردہ مالی بحران کے باعث ملک مالی خسارہ کا شکار چلا آ رہا ہے۔ لیکن حکومت طلباء کے ضروریات کو پورا کرنے کیلئے وظائف کی ادائیگی جاری رکھے گی۔/ای ایف ای  

Read More

موت کے سوداگر: فرید رزاقی، بلاگر، کالم نگار، سماء اخبار پاکستان

Feb 21, 2017

پاکستان میں تب تک حکومت کے کان پر جوں نہیں رینگتی، جب تک کوئی جانی و مالی نقصان نہ ہوجائے۔ 2014ء میں ایک بل حکومت اپنی اکثریتی طاقت کا فائدہ اٹھاتے ہوئے پاس کرتی ہے۔ اِس حوالے سے کیمسٹ، فارماسیوٹیکل اور دواساز کمپنیاں دہائی دیتی رہیں کہ ہمارا مؤقف بھی جان لیجیئے لیکن مغلِ اعظم اپنے شاہی فرمان کے آگے کسی کی بات سننے کے کہاں قائل تھے؟ پھر دواساز کمپنیاں اپنی ہی حکومت کو متوجہ کرنے کے لئے اخبارات میں اشتہارات کا سہارا لیتی ہیں کہ خدارا ہمارا مؤقف بھی جان لیجیئے کہ جعلی اور اصلی ادویات میں کیا فرق ہے؟ لیکن مغلِ اعظم نے نہ موقف سُننا تھا اور نہ ہی سُنا۔ جس کا نتیجہ یہ نکلا کہ دواساز کمپنیوں نے احتجاج کی کال دے دی۔ لیکن بھلا شہنشاہ کو کیا پرواہ شٹر ڈاون سے، کیونکہ یہ تو خالص عوامی مسئلہ تھا۔

گزشتہ دنوں تنظیم کے مرکزی صدر طاہراعظم نے ایکسپریس کے پروگرام کل تک جاوید چوہدری کے ساتھ یہ انکشاف کیا ہے کہ ہم خواجہ سلمان رفیق اور دیگر صوبائی وزراء سے ملے، انہیں اپنا مؤقف دیا جس سے صوبائی وزیر نے اتفاق کرتے ہوئے اپنی بے بسی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف ہی اس پر کوئی فیصلہ لے سکتے ہیں اور ہم وہ اِس حوالے سے کچھ نہیں کرسکتے۔

اب یہاں سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ جب یہ صوبائی وزراء اتنے ہی بے بس ہیں اور فردِ واحد نے ہی تمام فیصلے خود کرنے ہیں تو پھر یہ جمہوریت کا ڈرامہ کیوں؟ بادشاہ اور شاہی خاندان نے ہی اگر سارے فیصلے کرنے ہیں تو غیر اہم اداروں کے اخراجات کے لئے عوام پر دباؤ کیوں ڈالا جارہا ہے؟ عدالتوں کو تالے لگادینے چاہیئے اور جاتی عمرہ اور وزیراعلیٰ ہاوس کے ساتھ ساتھ شاہی خاندان کے ہر فرد کو یہ باقاعدہ اعزاز دے دینا چاہیئے کہ وہ ملک کے سیاہ و سفید کے مالک ہیں۔ ظلِ الٰہی کی رضا ہوگی تو آپ کا موقف سُنا جائے گا اور اگر رضا نہیں تو آپ جائیں بھاڑ میں۔

اِس معاملے میں بھی یہی ہوا کہ دواساز کمپنیاں مال روڈ پر احتجاج کے لئے جمع ہوتی ہیں لیکن حکومتی وزیروں کو فرصت ارے نہیں، جرات نہیں ہوتی کہ وہ اُن سے جاکر مذاکرات کریں، جب کہ انٹیلی جنس رپورٹس موجود تھیں کہ لاہور میں 2 خودکش بمبار داخل ہوچکے ہیں پھر بھی فول پروف سیکیورٹی کے دعویدار خادم اعلیٰ نے اپنی ہٹ دھرمی برقرار رکھی۔ لوگوں کی جان کو کوئی پرواہ تھی نہ ہے اور نتیجہ وہی نکلا جس کا خدشہ موجود تھا۔ بھیڑیوں کو بالکل آزادی دے دی گئی کہ وہ انسانیت کو چیرپھاڑ ڈالیں۔ ایک وحشی درندہ آتا ہے اور لاہور کے سب سے حساس علاقے میں دیئے گئے دھرنے کو نشانہ بناتا ہے جس میں دھرنے کے شرکاء سمیت پولیس کے اعلی افسران ہم سے رخصت ہوگئے۔

اِس بدقسمت ساںحے کے بعد ہونا تو یہ چاہیئے تھا کہ صوبائی حکومت اپنی غلطی کو تسلیم کرتی، مگر پہلے ایسا ہوا ہے جو اب ہونا تھا؟ بلکہ سانحہ کے بعد ظل ِالٰہی فول پروف سیکیورٹی کے حصار میں اسپتال کا دورہ کرتے ہیں اور روٹین کی تسلی دینے کے بعد یہ اہم ترین انکشاف کرتے ہیں کہ لاہور دھماکہ دشمنوں کی سازش ہے۔ یعنی کہ اگر وہ قوم کو یہ نہیں بتاتے تو ہمیں تو پتہ ہی نہیں چلتا، لیکن نہ جانے وہ قوم کو یہ کیوں نہیں بتاتے کہ عوام کی جان و مال کی حفاظت میں وہ بُری طرح ناکام ہوچکے ہیں۔

بات تلخ ہے لیکن شاید عوام کو بھی لاشیں اٹھانے کی عادت پڑچکی ہے۔ اِس لئے ہر سانحہ کے بعد مکمل خاموشی طاری رہتی ہے۔ عوام کی اکثریت تو یہی سمجھ رہی ہے کہ دھرنا دینے والے دوا ساز موت کے سوداگر تھے جو خود موت کا شکار ہوگئے کیونکہ صبح و شام الیکٹرانک میڈیا پر مہنگے اشتہارات، پرنٹ میڈیا پر پورے صفحے پر مشتمل موت کے سوداگر کے اشتہارات دیکھنے کے بعد عوام کیوں غمگین ہو کر اُن کاغم منائے۔ ایسے موت کے سوداگروں کو جینے کا کوئی حق حاصل نہیں تھا۔ اُن کو تو ویسے بھی بہت جلد سلاخوں کے پیچھے عمر قید یا سزائے موت کی سزا ہوجانا تھی۔ اگر ایک خود کش حملہ آور نے اُن کا راستہ آسان کردیا تو غم کیسا؟

یہ سطریں پڑھ کر یہ ممکن ہے کہ آپ مجھے پاگل کا طعنہ دیں گے اور آپ کا بس چلے تو میرا گریبان بھی پکڑلیں لیکن حضور تحمل سے کام لیجیئے اور میری اگلی سطریں پڑھ کر خود فیصلہ کیجیئے گا کہ میں نے کیا غلط کہا ہے؟ کیا آپ بھی میری طرح اشتہارات دیکھ اور پڑھ کر اب تک اِس نتیجے پر نہیں پہنچ چکے تھے کہ یہ سب دوا ساز موت کے سوداگر ہیں؟

لیکن میرے نزدیک حقیقت کچھ اور ہے، مال روڈ پر 15 سے 20 ہزار یہ موت کے سوداگر کیوں جمع ہوئے اِس کا پس منظر کیا ہے اِس حوالے سے کم ہی لوگ واقف ہوں گے اور مجھے تو شکوہ ہے اُن موت کے سوداگروں سے بھی ہے جو اپنا مدعا معاشرے میں موجود لوگوں تک نہ پہنچا سکے، انہیں اپنی صفائی نہ دے سکے، مہنگے اشتہارات کے عوض اِن موت کے سوداگروں کی آواز میڈیا تک بھی نہ پہنچ سکی، لیکن اصل حقیقت کیا ہے وہ جانیئے اور اگر ممکن ہوسکے تو آپ کی خدمت کرنے والوں اور موت کے سوداگروں میں تمیز ضرور کیجیئے گا۔

یہ 2012ء کی بات ہے جب پاکستان میں آصف علی زرداری صاحب کی حکومت موجود تھی۔ وزیر فردوس عاشق اعوان صاحبہ نے 1976ء کے ایکٹ میں ترمیم کرتے ہوئے ڈرگز کی تعریف تک بدل کر رکھ دی تھی اور ایک لفظ کی ہیر پھیر سے وہ بگاڑ پیدا کیا جس کی تلافی اب تک نہیں کی جاسکی۔ 2012ء تک  فردوس عاشق اعوان صاحبہ نے ہربل ادویات کو ایلوپیتھک ادویات کی نسبت جو استثنیٰ حاصل تھا اسے انگریزی کے ایک لفظ ’’Excluding‘‘ کی جگہ ’’Including‘‘ کا استعمال کرکے بچوں کا دودھ، فنائل، صابن، شیمپو وغیرہ تک سب کو ڈرگ کا درجہ دے دیا۔ یوں ایک نقطے کی غلطی نے محرم کو مجرم بنادیا۔

اداروں نے دہائیاں دی لیکن انہیں تسلی دی گئی کہ ہم اِسے واپس لے لیں گے، مگر بدقسمتی سے کچھ بھی نہ ہوسکا۔ پھر 2013ء میں عام انتخابات ہوئے اور وفاق میں مسلم لیگ (ن) کی حکومت آگئی۔ SRO-412 کے تحت 2014ء میں وفاقی حکومت نے ہربل اداروں کو کہا کہ وہ اپنے آپ کو ان لِسٹ کرالیں۔ اِس موقع پر دوا سازوں کی انجمن نے کہا کہ انہیں اِس حوالے سے بھلا کیا اعتراض ہوسکتا ہے اور ہم اپنا نام درج کراتے جاتے ہیں، لیکن بتانے والے بتاتے ہیں کہ اِس حوالے سے بہت بے ضابطگیاں کی گئیں، جن میں نوازنے والوں کو نوازا گیا اور مخالف لوگوں پر سختی کی گئی۔

یہ پورا معاملہ خالصتاً وفاق سے منسلک تھا اور صوبائی حکومتوں کو اِس حوالے سے کوئی پریشانی نہیں تھی، لیکن چونکہ پنجاب میں بھی ن لیگ کی حکومت تھی اِس لئے وہاں بھی ایسے معاملات چلانے کی کوشش کی جس کی بنیاد پر اپنے لوگوں کو کسی حد تک نوازا جاسکے، لیکن جب اِس پوری کارروائی میں اپنے لوگ میں مشکل میں آنے لگے تو خیال آیا کہ کیوں نہ قانون میں تبدیلی کرلی جائے۔ اگر عوامی مفاد کے لئے سب کیا جائے اور میرٹ کی بنیاد پر لوگوں کو اِس حوالے سے ذمہ داری دی جائے تو بھلا کس کو پریشانی ہوسکتی ہے، لیکن یہاں المیہ یہ ہوتا ہے کہ جن کو قانون سازی کی ذمہ داری سونپی جاتی وہ دواسازی کے عمل کی ’الف، ب‘ سے بھی واقف نہیں ہوتے۔

رواں ماہ پنجاب میں جو نیا ڈرگ ایکٹ منظور ہوا ہے اُس میں ایک دلچسپ بات سامنے آئی کہ غیر معیاری ادویات کو جعلی قرار دے دیا گیا ہے اور اِس سے بھی بڑھ کر المیہ یہ ہوا کہ اِس جرم کے لیے 5 سے 15 کروڑ روپے تک کا جرمانہ یا 15 سال قید کی سزا رکھی گئی ہے اور وہ ناقابل ضمانت۔ اب بات کرتے ہیں کہ غیر معیاری اور جعلی ادویات میں فرق کیا ہوتا ہے، غیر معیاری ادویات وہ ہوتی ہے جو انسانی غلطی کی وجہ سے پرانی ہوجائیں یا موسم کی وجہ سے خراب ہوجائیں، یعنی غیر معیاری دوائی جان بوجھ کر نہیں بنائی جاتی بلکہ یہ خاص غلطی کی وجہ سے ہوتا ہے، لیکن دوسری طرف جعلی ادویات ایک جرم ہے جس میں دوائی کا فارمولا ہی تبدیل کردیا جاتا ہے اور اپنے منافع کی خاطر انسانی جان کو نقصان پہنچایا جاتا ہے۔

سزا سے متعلق چند دلچسپ چیزیں بھی عوام کو بتاتا چلوں کہ تمام سزاوں کا اختیار ڈرگ انسپیکٹر کو دے دیا گیا ہے، یعنی اگر کسی دوکاندار کا ڈرگ انسپیکٹر سے اچھا تعلق ہوا تو وہ بچ جائے گا اور اگر کچھ اونچ نیچ ہوئی تو سمجھیں دوکاندار تو بے موت ہی مارا جائے گا۔ اگرچہ سزا کے خلاف اپیل ڈرگ کورٹ میں دائر کی جاسکتی ہے لیکن ڈرگ کورٹ سے متعلق بھی جان کر آپ کو حیرت کے جھٹکے لگیں گے کہ لاہور میں واحد جج ہے۔ اِسی طرح ایک ملتان میں بھی ہے اور پورے پنجاب میں کوئی 5 ڈرگ کورٹ کے جج ہوں گے، لیکن عام خیال یہی ہے کہ ڈرگ کورٹ کے جج حضرات حکومت کے خلاف فیصلے کم ہی سناتے ہیں۔ سزا کے خلاف اگر آپ ہائی کورٹ جانے کا ارادہ رکھتے ہیں تو اُس کے لیے ہائی کورٹ کا ڈبل بینچ بننا ضروری ہے تب ہی آپ کی بات پر کان دھرے جائیں گے جبکہ ایسا عام طور پر قتل کے مقدمے میں ہی ہوتا ہے۔

ڈرگ ایکٹ میں ایک شق یہ بھی ہے کہ میڈیکل اسٹور پر 24 گھنٹے ائیر کنڈیشن (اے سی) چلنے چاہیئے، جبکہ دوکانوں میں گرد و غبار قطعی طور پر بھی برداشت نہیں کیا جائے، لیکن کوئی ایک قانون بنانے والوں سے پوچھے کہ کیا پنجاب میں 24 گھنٹے بجلی میسر ہے؟ اگر بجلی میسر ہے اور حکومت سبسڈی دینے کے لئے تیار ہے تو ٹھنڈک میں بیٹھنا بھلا کس کو بُرا لگتا ہے لیکن مسئلہ یہ ہے کہ بھلا اِس قدر مہنگائی میں بجلی کے بھاری بل کیسے جمع کروائے جائیں؟ اب آتے ہیں گرد و غبار والے نقطے پر، جس جگہ ہر گلی، ہر محلے، مٹی اور کچرے سے بھرا پڑا ہو بھلا وہاں دوکان کی مکمل صفائی کس طرح رکھی جاسکتی ہے؟ ہاں اگر حکومت گلی محلوں کی صفائی کروادے اور عوام کو صاف ماحول فراہم کرے تو یقیناً میڈیکل اسٹور پر بھی اچھا ماحول دستیاب ہوگا۔

اب اتنے سخت ترین قوانین کی صورت میں بھلا کس کے لئے کاروبار کرنا ممکن ہوسکے گا؟ کاش ہمارا نظام مغرب کی طرف اِس قدر مضبوط ہوتا جہاں ہمیں ڈرک انسپیکٹر پر خود سے زیادہ بھروسہ ہو کہ نہیں اگر سزا دی جائے گی تو بالکل ٹھیک دی جائے گی، کوئی رشوت کا لین دین نہیں ہوگا، لیکن بدقسمتی سے ہم جانتے ہیں کہ وطنِ عزیز کا پورا نظام بد عنوان ہے، یہ ایک ایسا سسٹم ہے جہاں 10 روپے رشوت نہ ملنے پر سرکارکے اہلکار غصے سے بے قابو ہوجاتے ہیں۔

عام خیال نہیں بلکہ جمہوریت کا حقیقی مفہوم ہی یہ ہے کہ جمہور یعنی عوام کی حکومت ہوتی ہے۔ اِسی لئے جمہوریت میں حکمرانوں کی جانب سے ایسے فیصلوں اور قوانین کی اُمید رکھی جاتی ہے، جن سے عوام کو فائدہ اور سکون میسر آسکے، لیکن موجود ڈرگ ایکٹ کی وجہ سے ہوا یہ ہے کہ پاکستان کی ہربل انڈسٹری عملاً بند ہوچکی ہے۔ جس کا سہرا پنجاب حکومت کے سر پر ہے۔ دوا ساز کمپنیوں نے عدالت سے اسٹے آرڈر لے رکھا ہے، لیکن اِس کے باوجود چھاپہ مار ٹیمیں سرگرم ہیں اور دوا ساز کمپنیوں کا معاشی اور سماجی استحصال جاری ہے۔ دوسری طرف پاکستان کی دوا ساز کمپنیوں کا مطالبہ ہے کہ انہیں مزید کچھ وقت دیا جائے تاکہ وہ معیار کو اور بھی بہتر کرسکیں لیکن حکومت اپنے پس پردہ مفادات پر ہرگز سمجھوتہ کرنے کے موڈ میں نہیں ہے۔

یہ صورتحال اب صرف ایک صوبائی حکومت تک محدود نہیں رہی، بلکہ ہمیشہ کی طرح ہمارا دشمن بھارت بھی اِس پورے معاملے سے فائدہ اُٹھانے کے لئے پوری طرح تیار ہے۔ پاکستان کی دوا ساز کمپنیوں کے خلاف پراپیگنڈہ شروع ہوچکا ہے اور جن جن ممالک میں پاکستان کی ادویات فروخت کی جارہی ہوتی ہیں وہاں پنجاب حکومت کے اشتہارات پہنچائے جارہے ہیں اور پاکستانی کمپنیوں سے خریدار کہہ رہے ہیں کہ آپ کا وزیراعلیٰ تو آپ کو موت کا سوداگر کہہ رہا ہے تو ہم کیونکرآپ کی دوائیاں خریدیں؟

حکیم اجمل جن کا قیام پاکستان میں کردار کوئی فراموش نہیں کرسکتا اُن کے دواخانے پر تالے پڑے ہیں۔ مرحبا، قرشی اور دیگر پاکستانی ادارے جنہوں نے ایلوپیتھک کے مقابلے میں تحقیق کرکے پاکستان میں اور بین الاقوامی اداروں میں اپنا نام کمایا ہے، جنہوں نے ہیپا ٹائٹس تک کا علاج دریافت کیا ہے انہیں بھی موت کے سوداگر کہہ کر مخاطب کیا جارہا ہے۔ یعنی اچھے اور بُرے میں تمیز ہی اب ختم ہوچکی ہے۔ خدانخواستہ آج پاکستان پر اگر ایسے بُرے حالات آجاتے ہیں جن میں بیرونِ ممالک سے ادویات نہ مل سکیں تو پاکستان کیا کرے گا؟ اِس کا جواب آپ کی حکومت کے پاس نہیں ہے اور نہ ہی وہ اِس پر سوچنا چاہتی ہے۔ اب ذرا دیگر ممالک کو جانیے جنہوں نے اپنے روایتی طریقہِ علاج کی سرپرستی کرتے ہوئے پیش رفت کی۔ بھارت سے محبت کے گن گائے جاتے ہیں تو پہلی مثال بھارت کی ہی لے لیجیئے۔ بھارت میں باقاعدہ وزارت موجود ہے جو اپنے روایتی طریقہِ علاج کی تشہیر پر کام کررہی ہے اور دنیا بھر میں اپنی کمپنیوں کی برینڈنگ کا فریضہ سرانجام دے ر ہی ہے۔

’’انڈین ٹریٹمنٹ ‘‘ کے نام پر روایتی طریقہِ علاج کو قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔ اِس وقت جب ہماری کمپنیوں کو تالے لگائے جارہے ہیں بھارت سے دھڑا دھڑ ادویات منگوا کر پاکستان کے گن گائے جارہے ہیں۔ بھارت کی 12 دوا ساز کمپنیاں ڈابر، ہمالیہ وغیرہ پاکستان میں ادویات سپلائی کررہی ہیں۔ چین ہمارا دوست اور ہمسائے ملک کی لوکل انڈسٹری ہربل پر انحصار کرتی ہے، جاپان جیسا ترقی یافتہ ملک اپنے روایتی طریقۂ علاج ’’کومپو‘‘ کو اپنائے ہوئے ہے، لیکن ہم ہیں کہ بے بسی کے بت بنے بیٹھے ہیں اور منتظر ہیں اگلے کسی کاری وار کے۔ سُننے میں تو یہ بھی آرہا ہے کہ بھارت اور ترکی سے ادویات منگوانے کے حوالے سے بھی کوئی تیاری کی جارہی ہے، جس کا مقصد صرف بھاری کمیشن ہیں، اور ڈرگ ایکٹ شاید اسی کے لیے راہ ہموار کرنے کے لیے تیار کیا گیا ہے۔

اِس پورے کھیل میں ایک اور تکلیف دہ امر یہ ہے کہ طبِ نبوی اور ہومیوپیتھک کو سستا علاج قرار دے کر یہ بات ثابت کرنے کی کوشش کی جارہی ہے کہ یہ فائدہ مند نہیں ہے، اِس لیے اِس پر پر بھی مکمل پابندی عائد کردی جائے۔ سیانے کہتے رہے کہ کسی تاجر کے ہاتھ حکومت نہ دی جائے مگر قوم نے کان نہ دھرا، نتیجتاً موت کے سوداگروں کا یہی انجام ہونا چاہیئے تھا۔ اس لئے رعایا کو چاہیئے کہ وہ شہنشاہوں کے گُن گائیں اور پاکستان کی انڈسٹری کی تباہی کاجشن منائیں۔

لیکن یاد رہے کہ اِس پوری تحریر کا مقصد یہ ہرگز نہیں کہ ڈرگ ایکٹ 2017 میں کوئی اچھے پہلو نہیں، بلکہ یقیناً اِس میں ایسے بہت سے اچھے پہلو ہیں جن سے دو نمبر افراد مشکلات میں پھنس جائیں گے، لیکن اتنی تلخ باتیں لکھنے کا مقصد صرف یہ ہے کہ چند دو نمبر لوگوں کو مشکل میں پھنسانے کے لیے پوری انڈسٹری کو نشانہ کیوں بنایا جارہا ہے۔

Read More

بارسلونا: 18 مارچ کے مشاعرے کی تیاریاں شروع۔ چوہدری شاہد لطیف گجر

Feb 21, 2017

مسلم لیگ ن سپین کے نائب صدر چوہدری عبدالروف آف مکوال کے ریسٹورنٹ پر دوست احباب کا اکٹھ. دوست احباب میں مسلم لیگ ن سپین کے جنرل سیکرٹری الیگزینڈر راجو. جیو جنگ سپین کے نمائندے شفقت علی رضا. دنیا ٹی وی کے نمائندے اظہر عباس. چوہدری شاہد لطیف گجر اور چیف ایڈیٹر انصاف ممتاز سہوترہ شامل تهے اس موقع پر 18 مارچ کو ہونے والے مشاعرے پر بات چیت ہوئی. اور مسلم لیگ ن سپین کے نائب صدر چوہدری عبدالروف کو مشاعرے کی دعوت دی جو انہوں نے قبول کر تے ہوئے بھر پور شرکت کی یقین دہانی کرائی.یاد رہے کی اس مشاعرے کے مہمان خصوصی چوہدری عزیز امرہ ہونگے اور یہ مشاعرہ زیر صدارت سپین کے ایوارڈ یافتہ بزنس مین چوہدری امانت حسین مہر ہوگا

 

Read More

بارسلونا: پاکستانی کے چوری شدہ ٹرک نے شہر میں خوف پھیلا دیا

Feb 21, 2017

پچاس سال سے زائد عمر کے پاکستانی مالک کے گیس سلنڈروں سے بھرے ٹرک کی چوری نے بارسلونا میں خطرے کا الارم بجا دیا۔ واقعہ پیرالیل محلہ کی ویلا ای ویلا گلی میں پیش آیا۔ جہاں روزانہ معمول کے مطابق ٹرک صبح 9:30 سے 10 بجے تک کھڑا کر کے، گیس سلنڈر بیچے جاتے تھے۔ آج صبح بھی حسب معمول پاکستانی ڈرائیور نے ٹرک کو کھڑا کیا۔ اور چابی ٹرک میں ہی لگی رہنے دی۔ اور خود 'بار تیو پاکو' میں معمول کے مطابق چلا گیا۔ جس کے مالکان اب چینی پاشندے ہیں۔ ٹرک چوری کی اطلاع پاکستانی ڈرائیور کو سب سے پہلے خاویر نامی سپینش باشندے نے دی۔ پاکستانی مالک نے ٹرک کے پیچھے بھاگ کر اسے روکنے کی کوشش کی۔ لیکن کامیاب نہ ہو سکا۔ جس پر اس نے کتلان پولیس کو اطلاع دی۔ جس نے فوری طور پر موقع پر پہنچ کر ڈرائیور سے تمام تفصیلات حاصل کیں۔ مفرور ڈرائیور نے فرار ہوتے ہوئے ایک ٹیکسی کو بھی ٹکر مار دی۔ جس کے نتیجہ میں ایک خاتون زخمی ہو گئی۔ ویلا ای ویلا گلی میں رہنے والوں کے مطابق گیس سلنڈر بیچنے والے پاکستانی بہت محنتی ہیں۔ اور صرف اپنے کام سے کام رکھتے ہیں۔ کولمبس کے قریب بھی کسی نے کوئی خاص بات نوٹ نہیں کی۔ ماسوائے کہ ایک ٹرک تیز رفتاری سے جا رہا تھا۔ اور پولیس کے 4 موٹر سائیکل سوار اس کے تعاقب میں تھے۔ اس واقعہ کی پل پل کی خبر ٹی وی اور ریڈیو پر دی جاتی رہیں۔ بارسلونا رنگ روڈ میں پولیس کی جانب سے 7 گولیاں ٹرک پر فائر کیے جانے کے بعد ٹرک کو روک لیا گیا۔ اور سویڈش باشندے کو گرفتار کر لیا گیا۔ جو کہ ماضی میں ذہنی امراض کا شکار رہا ہے۔ بارسلونا کی میئر آدا کولائو نے صوبائی اور شہری پولیس کو مبارکباد پیش کی ہے۔ ال پریودیکو اخبار نے 2013 میں گوگل سٹریٹ ویو کی کھینچی ہوئی تصویر شائع کی ہے۔ جس میں چوری ہونے والا ٹرک گلی کی نکڑ پر کھڑا تھا۔/گوگل سٹریٹ ویو۔ 

Read More

کتلونیا 2016: 4.81 لاکھ مقدمات۔ جنسی تشدد اور خودکشیوں میں اضافہ

Feb 21, 2017

کتلونیا میں خودکشیوں اور قتل کے واقعات میں 2016؁ کے دوران 28.57 ٪ اور جنسی تشدد کے واقعات میں 9.43 ٪ اور گھروں میں چوری کی وارداتوں میں 2 ٪ اضافہ ہوا ہے۔ کتلونیا میں 2016 کے دوران جرائم میں 1.99 ٪ اضافہ دیکھا گیا ہے۔ 2016 میں کتلونیا میں کل 4.81.845 جرائم ہوئے۔ 2015 کے دوران جرائم کی تعداد 4.72.265 رہی۔ وہیں فراڈ کے جرائم میں 11.59 ٪ اضافہ بھی دیکھنے میں آیا۔ جو کہ 40.394 جرائم کا اندراج کیا گیا۔ فراڈ میں زیادہ تر جرائم کا تعلق کریڈٹ کارڈز کی نقل تیار کر کے انٹرنیٹ کے ذریعہ اشیاء کی خریداری کرنے سے رہا۔/موسوس

Read More

مالی امداد کا غلط استعمال: بلدیہ بارسلونا نے 5.89 لاکھ یورو کا مطالبہ کر دیا

Feb 21, 2017

ایمیگرنٹس دوست سیاسی پارٹی آئی سی وی سے تعلق رکھنے والی ڈپٹی میئر بارسلونا جانیت سانز اور جائومے اسینز نے بارسلونا شہر کے اربن ایریا کی ترقی کے ذمہ دار ادارہ بارسلونا ریجنل سے 5.89 لاکھ یورو واپسی کا مطالبہ کر دیا ہے۔ بارسلونا ریجنل کو ماضی میں 13 لاکھ یورو بطور مالی امداد ادا کیے گئے تھے۔ ڈپٹی میئر بارسلونا کے مطابق سی آئی یو، سے تعلق رکھنے والے ادارہ کے صدر کو جو رقم ادا کی گئی تھی۔ اس کے صرف کرنے میں جہاں بے قاعدگیاں پائی گئی ہیں۔ وہیں اس ادارہ کا دستور اسے ان خدمات کو ادا کرنے کی اجازت بھی نہیں دیتا، جن کے عوض رقم وصول کی گئی ہے۔/یورپ پریس 

Read More

بارسلونا: پاکستانی کا ٹرک چوری: دہشتگردانہ کاروائی میں استعمال کا خطرہ

Feb 21, 2017

کتلان پولیس اور بارسلونا کی شہری پولیس کو صبح 10:40 منٹ پر گولیوں کی برسات کر کے گیس سلنڈروں سے بھرے چوری شدہ ٹرک کو روکنا پڑا۔ ٹرک کے چوری ہونے کے بعد حکام کو خدشہ تھا کہ اسے کسی دہشت گردانہ کاروائی میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔ ٹرک چوری کرنے والے شخص کا تعلق سویڈن میں ہے۔ اور پولیس کے مطابق وہ ماضی میں ذہنی امراض کا شکار رہا ہے۔ چور نے ٹرک کو ویلا ای ویلا گلی سے علی الصبح چوری کیا تھا۔ اور رنگ روڈ کے 22 نمبر انٹری پوائنٹ سے مخالف سمت سے داخل ہونے کی کوشش کر رہا تھا۔ جبکہ اس دوران ٹرک سے گیس سلنڈر بھی نیچے گر رہے تھے۔ اور کسی بڑے حادثے کا موجب بن سکتے تھے۔ معاملہ کی سنگینی کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ،  سویڈش چوری کی گرفتاری پر کتلان وزیر داخلہ کو اپنے ٹویٹر پیغام کے ذریعہ واقعہ کی وضاحت کرنا پڑی۔/ٹویٹ

Read More

سابق وزیر سیاحت سپین: ہوٹل میں 4 دن مفت قیام عدالت میں ثابت

Feb 21, 2017

عدالت نے سابق وزیر سیاحت سپین خوسے مانویل سورایا کی جانب سے ال دیاریو۔ ای ایس ڈیجیٹل اخبار کے خلاف دائر کیا گیا، ہتک عزت کا مقدمہ خارج کر دیا ہے۔ اخبار نے 9 اگست کو خبر شائع کی تھی کہ سابق وزیر سیاحت اور سابق وزیر تعلیم ویرت، نے لاطینی ملک ریپبلیکا ڈومینیکانا کے ایک ہوٹل میں اپنی زوجہ کے ساتھ مفت قیام کیا تھا۔ یہ خبر سورایا نے قومی اسمبلی سپین میں خطاب کے دوران جھٹلاتے ہوئے ہتک عزت کا دعوی دائر کر دیا تھا۔ میڈریڈ کی عدالت نے مقدمہ کی سماعت کے بعد قرار دیا کہ سورایا نے صرف اضافی اخراجات ادا کیے۔ جیسے "سپاء" کی سہولیات کے اخراجات وغیرہ۔ سورایا نے جس ہوٹل میں قیام کیا۔ وہاں ایک رات قیام کا کرایہ 1700 یورو ہیں۔ اور سورایا نے صرف 283 یورو ادائیگی کی۔ عدالت نے فیصلہ میں عدالتی اخراجات کی ادائیگی کا ذمہ دار سورایا کو ٹھہراتے ہوئے اخراجات کی ادائیگی کا حکم بھی جاری کیا۔ سورایا گذشتہ دور حکومت میں پانامہ سکینڈل میں شامل ہونے کے باعث اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئے تھے۔/یورپ پریس 

Read More

شاہ سپین کے بہنوئی، اردانگرین: سزا کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل کریں گے

Feb 21, 2017

کرپشن الزامات کے تحت قید کی سزا پانے والے شاہ سپین کے بہنوئی، اردانگرین اپنی سزا کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل دائر کریں گے۔ ان خیالات کا اظہار اردانگرین کے وکیل ماریو پاسکوال نے کیا۔ ماریو کے مطابق اس کی رائے میں، اس کے کلائنٹ اردانگرین کو چھ سال کی جیل کی سزا کے باوجود جیل میں قید نہیں کیا جا سکتا۔ اور ان کے کلائنٹ کو مالیاتی ضمانت کے عوض جیل کی سزا سے بچا جا سکتا ہے۔/ای ایف ای  

Read More

سپینش شہریت: دیلے اے 2 ہمیشہ، سی سی ایس ای 4 سال کیلئے کارآمد

Feb 20, 2017

سپین کی شہریت کے حصول کیلئے 15 اکتوبر 2015 سے شہریت کے خواہشمندوں کو دو امتحانات لازمی طور پر پاس کرنے لازمی ہیں۔ ان میں سے ایک زبان کا دیلے آ 2 اور دوسرا ثقافت کا سی سی ایس ای امتحان ہے۔ قوائد کے مطابق دیلے آ 2 کا سرٹیفیکیٹ ہمیشہ کیلئے کارآمد ہے۔ جبکہ سی سی ایس ای کا سرٹیفیکیٹ 4 سال بعد ایکسپائر ہو جاتا ہے۔ اور سی سی ایس ای کا امتحان پاس کرنے والوں کو دوبارہ نئے سرے سے امتحان پاس کر کے سرٹیفیکیٹ حاصل کرنا لازمی ہوتا ہے۔

Read More

سپین کی 2.54 کھرب یورو کی ریکارڈ برآمدات

Feb 20, 2017

سپین کا تجارتی خسارہ 2016 کے اختتام پر 18.75 ارب یورو ہو گیا ہے۔ جو کہ 2015 کی نسبت 22.4٪ کم ہے۔ تجارتی خسارہ میں کمی کی وجہ برآمدات میں 1.7٪ اضافہ کے ساتھ 2.54 ارب یورو کی سطح پر پہنچنا ہے۔ جبکہ دوسری طرف درآمدات کم  ہو کر 2.73ارب یورو ہو گئی ہے۔ سپین کی یورپی یونین کے ممالک کو برآمدات میں اضافہ ہو گیا ہے۔ جب کہ 50 ہزار سپینش کمپنیاں، اپنی مصنوعات برآمد کر رہی ہیں۔/جوان کاسترو، ایکونا

Read More

مرسیہ صوبہ کے صدر: کرپشن سکینڈل کے باعث عدالت میں طلب

Feb 20, 2017

مرسیہ صوبہ کے صدر پیدرو انتونیو سانچیز کو آڈیٹوریم کرپشن سکینڈل میں ملوث ہونے پر عدالت میں طلب کر لیا گیا ہے۔ ان پر لمبریراس پورٹ کی میئرشپ کے دوران فراڈ، سرکاری کاغذات میں جعل سازی اور سرکاری رقوم کے غلط استعمال کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ پیدرو اس سے قبل پونیکا کرپشن سکینڈل میں تحقیقات کا سامنا کر چکے ہیں۔/مارسیال گوئیعن۔ای ایف ای 

Read More

بارسلونا شہر میں پاکستانیوں کی 1136 سپر مارکیٹیں

Feb 20, 2017

ال پریودیکو اخبار میں پتریسیا کاستان نامی صحافی نے بارسلونا میں پاکستانیوں کی سپر مارکیٹس پر ایک جامع رپورٹ شائع کی ہے۔ صحافی کے مطابق، طویل اوقات کار اور ہنگامی حالات میں کچھ بھی خریدنے کی سہولت فراہم کرنے کے باعث کچھ سال قبل کھلنے والی پاکستانیوں کی سپر مارکیٹس، شہریوں روزمرہ زندگی کا معمول بن چکی ہیں۔ ابتداء میں روال محلہ میں کھلنے والی یہ سپر مارکیٹیں پورے شہر میں پھیل چکی ہیں۔ یہ 1136 سپر مارکیٹیں، شہر کی کل سپر مارکیٹوں کا چھٹا حصہ ہیں۔ روال محلہ میں فی کلومیٹر 96.5 سپر مارکیٹیں کھل چکی ہیں۔ آبادی کیے حساب سے بھی سب سے زیادہ سپر مارکیٹیں روال محلہ میں ہی ہیں۔ جہاں ہر 10 ہزار کی آبادی کیلئے 22 سپر مارکیٹیں کھلی ہوئی ہیں۔ یہ سپر مارکیٹیں بارسلونا شہر کی کھانے پینے کی اشیاء کی طلب کا 17.63 ٪ حصہ مہیا کر رہی ہیں۔ رپورٹ کے مطابق بارسلونا میں جب دو دہائیاں قبل پہلی دفعہ پاکستانیوں نے سپر مارکیٹس کھولیں تو یہ وہ لوگ تھے۔ جو کہ پاکستان میں بھی اسی طرح کے کاروبار سے منسلک رہے تھے۔ بعد ازاں معاشی بدحالی کے دور میں اپنے سابقہ ملک سے متعلقہ سامان کی فروخت کیلئے سپر مارکیٹوں کو کھولنے کا رحجان شروع ہوا۔ پی سی او کاروبار کے فلاپ ہونے کے بعد بھی پی سی او مالکان کا رحجان سپر مارکیٹوں کی جانب ہوا۔ مزید پڑھنے کیلئے نیچے دیے گئے لنک پر کلک کریں۔

http://www.elperiodico.com/es/noticias/barcelona/los-colmados-inmigrantes-copan-una-sexta-parte-del-comercio-alimentario-calle-barcelona-5842124

Read More

کتلان خواتین: یورپ میں سب سے طویل عمر پانے والی خواتین

Feb 20, 2017

کتلان خواتین، یورپ بھر میں سب سے طویل عمر پانے والی خواتین کا اعزاز حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئی ہیں۔ کتلان خواتین کی اوسط عمر 86.1 سال قرار دی گئی ہے۔ جبکہ مردوں کی اوسط عمر 80.5 سال ہے۔ جو کہ یورپ میں چھٹے سب سے زیادہ عمر پانے والے مرد ہیں۔/یورپ پریس 

Read More

سپینش دہشت گرد تنظیم “ایٹا”: غیر مسلح ہونے کے فایصلہ پر قائم ہے

Feb 20, 2017

ایٹا تنظیم اپنے غیر مسلح ہونے کے فیصلہ پر قائم ہے۔ اس بات کا اعلان سپینش دہشت گرد تنظیم ایٹا کے جیل میں قید ترجمان ڈیوڈ پلاء نے ایک اخباری انٹرویو میں کیا۔ تنظیم کب اپنے پاس موجود اسلحہ حکومت کے حوالہ کرے گی۔ اس سے متعلق کوئی حتمی تاریخ نہیں دی گئی۔/ال اسپانیول 

Read More

بغیر اجازت فیس بک کی تصاویر کی اشاعت: سپریم کورٹ سپین نے 15 ہزار یورو جرمانہ عائد کردیا

Feb 20, 2017

سپریم کورٹ سپین فیس بک پر "اپ لوڈ" کی جانے والی تصاویر کی بغیر اجازت اشاعت کرنے پر پابندی عائد کرتے ہوئے، اسے ذاتی تشہیر کے قانون کی خلاف ورزی قرار دے دیا ہے۔ سپریم کورٹ نے یہ حکم 'زامورا شہر' کے لا اوپینین دے زامورا اخبار کو ایک شہری کی فیس بک پر شائع ہونے والی تصاویر کو بغیر اجازت شائع کرنے پر 15 ہزار یورو ہرجانہ ادا کرنے کا حکم جاری کرتے ہوئے اپنے فیصلہ میں کیا۔ اخبار نے ایک شہری کی تصویر اپنے پرنٹڈ ایڈیشن کے صفحہ اول پر شائع کی تھی۔ متائثرہ شہری کو اس کے بھائی نے آتشیں اسلحہ سے زخمی کر دیا تھا۔ جبکہ  اخبار نے گولی چلانے والے شخص کی خودکشی کی خبر شائع کر دی تھی۔ سپریم کورٹ کے مطابق، انٹرنیٹ پر موجود سوشل میڈیا اکائونٹس میں شہری تصاویر نشر کرتے ہوئے عام عوام کو یا مخصوص افراد کو دیکھنے کی اجازت دیتے ہیں۔ لیکن کسی ایسے تیسرے شخص کو اجازت نہیں دیتے کہ وہ ان تصاویر کو شائع کردے۔ عدالت کے مطابق درخواست کنندہ، اس حوالہ سے فیس بک کمپنی کے خلاف مقدمہ دائر کرنے کا مجاز نہیں ہے۔ اور تصاویر شائع کرنے والے اخبار کو اس ایڈیشن کی اپنے ریکارڈ روم میں موجود تمام کاپیاں ضبط کرنے کا حکم بھی دیا۔

Read More

بھنگ کا بطور علاج استعمال: قومی اسمبلی سپین میں بحث کا آغاز

Feb 20, 2017

آدھ سال قبل بیماروں اور سپین کے تحقیق کاروں نے قومی اسمبلی سپین سے بھنگ کو تھراپی کیلئے اور دوائیوں میں استعمال کرنے کی اجازت دینے کا مطالبہ کیا تھا۔ سیودادانا پارٹی کی جانب سے قومی اسمبلی سپین میں تحریری مطالبہ پیش کیا گیا ہے۔ جس میں بھنگ کو دوائیوں میں استعمال کرنے اور مخصوص مقامات پر جانچ پڑتال کے کڑے عمل سے گذرنے کے بعد فروخت کی اجازت دینے کیلئے قانون سازی کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ یورپ میں جرمنی، اٹلی اور چیک ریپبلک میں بھنگ کو دوائیوں میں استعمال کرنے کی اجازت دی جا چکی ہے۔/خورخے پیریس  

Read More

بارسلونا نے ہمیشہ تارکین وطن کو خوش آمدید کہا ہے۔ ارشاد احمد گوندل، صدر پاک یورپین فیڈریشن یورپ

Feb 19, 2017

پاک یورپین فیڈریشن یورپ کے صدر چوہدری ارشاد احمد گوندل نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ بارسلونا ہمیشہ ہی ایک تارکین وطن کو خوش آمدید کہنے والا شہر رہا ہے۔ تارکین وطن کو خوش آمدید کہنے کیلئے یورپ میں سب سے پہلے بڑے مظاہرے نے اس بات کو ایک بار پھر ثابت کر دیا ہے۔ ارشاد احمد گوندل نے مظاہرہ کے منتظمین کو کامیاب مظاہرہ پر مبارکباد پیش کی ہے۔ 

Read More

سپین: آتونامو زیادہ پینشن کیسے وصول کرسکتے ہیں؟

Feb 19, 2017

محکمہ سوشل سکیورٹی سپین کے مطابق 2014؁ میں ریٹائر ہونے والے 'آتونامو' کے ذریعہ کوتیزاسیون کروانے والوں نے 678.61 یورو ماہانہ پینشن وصول کی۔ دوسری طرف نوکریاں کرنے والوں 60 ٪ ملازمین ماہانہ اوسطا 1143.19 یورو پینشن وصول کر رہے ہیں۔ 2014 میں آتونامو جو پینشن وصول کر رہے تھے۔ وہ آتونامو کی کم از کم ماہانہ قابل ادائیگی ٹیکس رقم 871.01 یورو سے بھی کہیں کم ہے۔ اس فرق کا کس طرح دفاع ممکن ہے؟سپین کے تمام آتونامو کی ماہانہ اوسط آمدن 'باسے دے کوتیزاسیون' نکالی جائے تو وہ 999.27 یورو ماہانہ بنتی ہے۔ جبکہ تمام ورکرز کی اگر ماہانہ اوسط تنخواہ دیکھی جائے تو وہ 1703.71 یورو بنتی ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ آتونامو محکمہ سوشل سکیورٹی کو اپنا ذاتی ٹیکس کم ادا کرتے ہیں۔ اس لئے وہ کم پینشن وصول کرتے ہیں۔ جبکہ ملازمین کی جانب سے سوشل سکیورٹی کو ادا کی  جانے والی ٹیکس کی رقم کہیں زیادہ ہونے کی وجہ سے وہ پینشن بھی زیادہ وصول کرتے ہیں۔

2015 کی پہلی سہہ ماہی کے اعدادوشمار کے مطابق 86٪ آتونامو کم سے کم ذاتی تنخواہ، کوتیزاسیون 884.40 یورو ظاہر کر رہے ہیں۔ سوشل سکیورٹی کے مطابق 50 سال سے کم عمر افراد میں سے 90 ٪ کم سے کم کوتیزاسیون  ظاہر کرتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق آتونامو کیلئے ایک قابل قبول پینشن وصول کرنے کیلئے ضروری ہے کہ، وہ کم سے کم  کوتیزاسیون 1500 یورو کی بنیاد پر کروائیں۔ جو کہ آتونامو کی زیادہ سے زیادہ باسے دے کوتیزاسیون 3606 یورو کے نصف ہے۔ 1500 یورو ظاہر کرنے پر آتونامو ماہانہ 400 یورو ٹیکس سوشل سکیورٹی کو ادا کریں گے۔ آتونامو سوشل سکیورٹی محکمہ کو کم از کم ماہانہ 260 یورو اور زیادہ سے زیادہ 1 ہزار یورو ٹیکس ادا کر سکتے ہیں۔

موجودہ قانون کے مطابق آتونامو کی پینشن اس کے کام کے آخری 25 سال کے دوران ذاتی آمدن کی بنیاد پر کی جائے گی۔ جبکہ 2012 سے قبل پینشن طے کرنے کیلئے آخری 15 سال کی باسے دے کوتیزاسیون کی بنیاد پر طے کی جاتی تھی۔ اس سال سے نئے سسٹم کے تحت آتونامو کی پینشن اس کے آخری 18 سال میں کوتیزاسیون کی بنیاد پر طے کی جائے گی۔ موجودہ نافذ قانون کے مطابق 42 سال کی عمر کو پہنچنے والوں کو اپنی پینشن سے متعلق کوتیزاسیون بہتر سے بہتر کرنی ہو گی۔ وہیں یکم جنوری 2015 کو 47 سال کی عمر کو پہنچنے والے اگر ماہانہ 1926.60 یورو سے کم کی کوتیزاسیون کروا رہے ہیں۔ تو وہ کم سے کم 884.40 یورو کی کوتیزاسیون مزید ظاہر نہیں کر سکتے۔ بلکہ انہیں کم سے کم 953.70 یورو کی کوتیزاسیون کروانی ہو گی۔ جبکہ کوتیزاسیون کی زیادہ سے زیادہ حد کم ہو کر 1945.80 ہو جائے گی۔ کوتیزاسیون کی بیس سال میں دو دفعہ تبدیل کی جاسکتی ہے۔  

زیادہ پینشن وصول کرنے کیلئے جہاں ایک حل کوتیزاسیون بیس بڑھانے میں ہے۔ وہیں ایک متبادل طریقہ کسی بھی بینک یا نجی کمپنی کی جانب سے پینشن پلان یا بچت پلان حاصل کرنا بھی ہے۔ جس کے باعث ریٹائر ہونے کی صورت میں آتونامو والوں کو ایک اضافی مدد حاصل ہو جاتی ہے۔ سابق امیدوار قومی اسمبلی سپین و جنرل سیکرٹری پاک فیڈریشن سپین راجہ بابر ناصر نے کمیونیٹی کے آتونامو ادا کرنے والے افراد کو، بہتر پینشن وصول کرنے کیلئے، بہتر منصوبہ بندی کرنے کا مشورہ دیا ہے۔ جس کیلئے وہ اپنے خیستور سے بھی مزید رہنمائی لے سکتے ہیں۔  

Read More

شفقت علی رضا۔ پاکستان فیڈریشن آف کالمسٹ، یورپ چیپٹر کے صر منتخب

Feb 19, 2017

میں پاکستان فیڈریشن آف کالمسٹ کے صدر ملک سلیمان صاحب کا مشکور ہوں جنہوں نے مجھے پاکستان فیڈڑیشن آف کالمسٹ یورپ کا صدر منتخب کیا ہے اور ذمہ داری لگائی ہے کہ میں یورپی ممالک میں مقیم پاکستانی کالم نگاروں کو اس فیڈریشن کا حصہ بناوں ۔۔۔۔ یورپی ممالک میں مقیم کوئی بھی پاکستانی جو کسی صحافتی ادارے سے منسلک ہو وہ دئیے گئے ممبر شپ فارم کے لنک کو کلک کر کے فیڈریشن کا ممبر بن سکتا ہے ۔۔۔
www.pakistanfederationofcolumnist.com
اگر کوئی فون پر یا ای میل کے زریعے رابطہ کرنا چاہے تو فون نمبر 0034632523625 اور ای میل 
shafqat.raza@janggroup.com.pk
 پر رابطہ کیا جا سکتا ہے ۔۔۔

Read More

کتلونیا ٹی 20 کرکٹ ٹورنامنٹ کا پہلا سیمی فائنل آج کھیلا جائے گا

Feb 19, 2017

کتلونیا ٹی 20 کرکٹ ٹورنامنٹ کے سیمی فائنل ڈراز کا اعلان کر دیا گیا ہے۔ سیمی فائنل آج 19 فروری کو صبح 9:30 پر ہاکس کرکٹ کلب اور کتلونیا کرکٹ کلب کے درمیان بیک گرائونڈ میں  کھیلا جائے گا۔ جس کے بعد بیک کرکٹ کلب اور ٹاٹیگرز کمبائینڈ الیون کے درمیان دوستانہ میچ بھی کھیلا جائے گا۔ 

Read More

سپین آرائیگو: کریکٹر سرٹیفیکٹ متعدد بار استعمال کیا جاسکتا ہے۔ عمران ملک ۔ پاک ای کیئر

Feb 19, 2017

پاک ای کیئر کے عمران ملک کے مطابق، آرا ئیگو والوں کی اللّٰہ تعالیٰ نے سن لی ہے۔ اور نئے ڈیجیٹل سسٹم کے متحرک ہونے کے باعث کریکٹر سرٹیفیکیٹ کے بار بار بنوانے سے جان چھڑوا دی ہے۔  عمران ملک کے مطابق، اب سپین کی ریذیڈنسی کے خواہشمند ایک ہی کریکٹر سرٹیفیکیٹ کو ایکسپائر ہونے سے قبل متعدد بار استعمال کر سکتے ہیں۔ یاد رہے کہ پرانے سسٹم کے تحت اصل کر یکٹر سرٹیفیکیٹ روک لیا جاتا تھا اور اگر نئے پیپرز جمع کروانے کی ضرورت پڑتی تو اس کے لییے نئے سرے سے ساری کاروائی کرنی پڑ تی تھی۔ مزید تفصیلات کیلئے پاک ای کیئر کے عمران ملک سے رابطہ کیا جاسکتا ہے۔ 

Read More

پشاور: پولیو قطروں سے انکار، 500 والدین کو گرفتار کرنے کا فیصلہ

Feb 19, 2017

پولیو سے بچوں کو محفوظ رکھنے والے قطرے اپنے بچوں کو پلانے سے انکار کرنے والے والدین کو گرفتار کرنے کا شہری انتظامیہ نے فیصلہ کر لیا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق یہ فیصلہ ایک سرکاری میٹنگ میں کیا گیا۔ جس میں اسٹنٹ کمشنر سمیت دیگر سرکاری حکام نے شرکت کی۔ اے سی پشاور الطاف احمد شیخ کا کہنا ہے کہ یہ شہری انتظامیہ کا آخری آپشن ہے کہ ان والدین کو گرفتار کیا جائے گا۔ 

Read More

بارسلونا شہر ٹرمپ کے ساتھ تعاون کیلئے تیار نہیں ہے۔ میئر آدا کولائو کا اعلان

Feb 19, 2017

ایمیگرنٹس دوست سیاسی پارٹی آئی سی وی پر مشتمل شہری حکومت بارسلونا کی میئر آدا کولائو نے ٹرمپ کے ساتھ تعاون کرنے سے انکار کر دیا ہے۔ آدا کولائو نے یہ اعلان اپنے فیس بک اکائونٹ پر کیا۔ آدا کولائو کے مطابق، "سپین کے صدر راخوئی نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو اپنے مخلصانہ تعاون کی پیشکش کرتے ہوئے، ٹرمپ کو بطور یورپ اور لاطینی امریکہ میں ترجمان یا رابطہ کار کے طور پر خدمات پیش کرنے کا اعلان کیا ہے۔

جناب راخوئی میں آپ کو واضح طور پر بتا دینا چاہتی ہوں کہ نہ تو میں اور نہ ہی بارسلونا شہر کی جانب سے ہم اس مخلصانہ پیشکش میں ایک ایسے شخص کے ساتھ تعاون کرنے کیلئے تیار ہیں، کہ جس نے اپنے ملک میں قومیت اور مذہب کی بنیاد پر لوگوں کا داخلہ بند کیا ہو۔ ہم ماحولیاتی تبدیلی کو روکنے کیلئے اقدامات کی کوششوں پر سوالیہ نشانات اٹھانے، انسانی حقوق کے بنیادی اصولوں کو پامال کرنے کا خطرہ بننے، خواتین سے متعلق منفی موقف اور پریس پر الزامات لگانے والے شخص کے ساتھ تعاون کیلئے تیار نہیں ہیں۔

وہیں میں راخوئی کی بطور رابطہ کار خدمات سے مطمئن نہیں ہوں، کیونکہ انہوں نے کبھی بھی سپین کے اندرونی تنازعات کے حل کیلئے کوئی کردار ادا نہیں کیا۔ اور ان کا رویہ ہمیشہ دیواریں کھڑی کرنے والے شخص کا رہا ہے۔ راخوئی کو جرمن چانسلر میرکل اور دیگر یورپی رہنمائوں کی پیروی کرنی چاہئے، کہ جن کی پالیسیاں جمہوری روایات کے برخلاف نہیں ہیں۔

میں جناب راخوئی کو یاد دلانا چاہتی ہوں کہ جب سابق سپینش صدر ازنار نے جارج بش کو تعاون کی پیش کش کی تھی تو بارسلونا سمیت سپین کے شہروں میں لوگ بطور احتجاج، جنگ کو روکو، کے نعرے تلے سڑکوں پر نکل آئے تھے۔ اس لئے جناب راخوئی کو واضح ہو جانا چاہئے کہ ہم اس مخلصانہ تعاون کی پیشکش کا حصہ بننے کیلئے تیار نہیں ہیں۔ 

Read More

بارسلونا کے ہوٹلوں میں ایک رات کا کرایہ: یورپ میں بلند ترین

Feb 19, 2017

ماگما اور سرت کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ کے مطابق بارسلونا میں ہوٹل میں ایک رات گذارنے کا کرایہ اوسطا 138.94 یورو تک جا پہنچا ہے۔ جبکہ یہ کرایہ ورلڈ موبائل کانگرس کے دوران اوسطا 360 یورو تک جا پہنچتا ہے۔ میڈریڈ میں ایک رات کا اوسط کرایہ 110 یورو وصول کیا جا رہا ہے۔ بارسلونا کے ہوٹلوں کے کرایہ یورپ کی بلند ترین سطح پر جا پہنچے ہیں۔ وہیں بارسلونا کے ہوٹلوں میں کمروں کے کرایہ پر چڑھنے کی سالانہ اوسط 76 ٪ ہے۔ جس کا بڑا سبب جہاں سیاحت کا فروغ ہے۔ وہیں 76 نئے ہوٹلوں کی تعمیر کی اجازت ملنا بھی قرار دیا جا رہا ہے۔ 

Read More

کتلان صوبہ کی سپین سے علیحدگی: کا تیسرا حل بھی ہے۔ آرتر ماس، سابق صدر کتلونیا

Feb 19, 2017

کتلونیا کی سپین سے علیحدگی مسئلہ، کا ایک 'تیسرا حل' بھی ہے۔ ان خیالات کا اظہار سابق صدر کتلونیا آرتر ماس نے جامعہ آتونامو میڈریڈ کے شعبہ قانون میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ال پائیس اخبار کے مطابق، آرتر ماس نے کتلان آزادی یا سٹیٹس قو، کو برقرار رکھنے کی دو انتہائوں کی بجائے فریقین کے درمیان، درمیانی راستہ تلاش کرنے کیلئے کوئی تیسرا حل تلاش کرنے پر زور دیا ہے۔ آرتر ماس کے مطابق یہ تیسرا حل وفاقی حکومت کی جانب سے دیا جانا چاہئے۔ سپینش صدارتی محل کے ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت، کتلان حکومت اور سابق صدر آرتر ماس کے ساتھ اس حوالہ سے رابطہ کرے گی۔ تاکہ اس امر کا جائزہ لیا جاسکے کہ اس 'تیسرے حل' سے متعلق وہ کیا تجویز پیش کرتے ہیں۔ اور اس پر مذاکرات ہو بھی سکتے ہیں یا نہیں۔ سپین حکومت کے ترجمان انیعگو میندیز نے وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد آرتر ماس یا کسی بھی ذمہ دار کے ساتھ اس تیسرے حل پر گفت وشنید کا اشارہ دیا ہے۔ اس سے قبل آرتر ماس کتلان آزادی کی بجائے 2010؁ میں کتلونیا کی خود مختار حکومت اور 2012؁ میں ایک معاشی معاہدہ کی تجویز پیش کر چکے ہیں۔/ماریسکال۔ ای ایف ای

Read More

بارسلونا۔ پناہ گزینوں کو خوش آمدید۔ 3 لاکھ افراد کی شرکت، یورپ میں پہلا بڑا مظاہرہ

Feb 19, 2017

ہفتہ کے روز بارسلونا میں "ہمارا گھر تمہارا ہے" کے نعرے تلے پناہ گزینوں کے حق میں یورپ کے پہلے بڑا مظاہرہ کا اہتمام کیا گیا۔ ایمیگرنٹس دوست سیاسی پارٹی آئی سی وی سمیت تمام سیاسی پارٹیوں نے اس میں شرکت کی۔ البتہ پاپولر پارٹی نے شرکت سے احتراض برتا۔ مظاہرہ کے منتظمین کے مطابق مظاہرہ میں 3 لاکھ افراد نے شرکت کی۔ جبکہ مقامی پولیس شرکاء کی تعداد 1.60 لاکھ بیان کر رہی ہے۔ مظاہرہ شام 4 بجے اورقینائونا چوک سے شروع ہو کر بارسلونیتا پارک میں اختتام پذیر ہوا۔ اس سے قبل 12 فروری کو پناہ گزینوں کیلئے فنڈز اکٹھا کرنے کیلئے بارسلونا کے پلائو سانت جوردی میں ایک بہت بڑے کنسرٹ کا بھی اہتمام کیا گیا تھا۔ پاک فیڈریشن سپین کے جنرل سیکرٹری و سابق امیدوار قومی اسمبلی سپین راجہ بابر ناصر اور  سابق امیدوار صوبائی اسمبلی بارسلونا عدیل وڑائچ نے اپنے بیان میں پناہ گزینوں کے حق میں آواز بلند کرنے پر اہلیان بارسلونا کا شکریہ ادا کیا ہے۔/کورتینا 

Read More

بارسلونا۔ 50 افراد کا پولیس پارٹی پر حملہ۔ 6 سپاہی زخمی

Feb 19, 2017

ہوسپیتالیت دے یوبریگات، بارسلونا  میں 50 کے قریب افراد نے پولیس پارٹی پر ڈنڈوں اور مکوں سے حملہ کر دیا۔ جس کے باعث 6 سپاہی زخمی ہو گئے۔ وقوعہ 'فلوریڈا بلاکس' کے علاقہ میں پیش آیا۔ جب 4 نوجوان ایک کار کو الٹا دینے کی کوشش کر رہے تھے۔ جبکہ کار ڈرائیور، گاڑی میں موجود تھا۔ پولیس کی مداخلت پر چاروں نوجوانوں نے مدد کیلئے چیخنا شروع کر دیا۔ جس پر بلاکوں میں سے 50 کے قریب افراد نے نکل کر پولیس پارٹی پر حملہ کردیا۔ حالات کو قابو میں لانے کیلئے مزید نفری طلب کرلی گئی۔ اس دوران چاروں نوجوان فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔ پولیس کے دو سپاہیوں کو سر اور جسم پر ڈنڈوں کے باعث ضربات لگیں۔ بعد ازاں پولیس نے دو افراد کو پولیس پر حملہ کے جرم میں گرفتار کرلیا۔/اے سی این

Read More

سپین۔ خراٹے لینے پرساتھی خاتون پر چھریوں کے وار کر کے زخمی کر دیا

Feb 19, 2017

سپین کے شہر بایادولید میں پولیس نے 21 سالہ نوجوان کو گرفتار کر لیا۔ یہ واقعہ صبح اڑھائی بجے پیش آیا۔ جب  ایک فلیٹ کے ایک ہی کمرے میں رہائش پذیر ملزم نے اپنی 56 سالہ ساتھی خاتون پر حملہ کر دیا۔ خاتون کے مطابق  وہ سو رہی تھی۔ اور اس کی آنکھ اس وقت کھلی جب اس پر اس کے ساتھی نے چھریوں سے حملہ کر دیا۔ جس کے باعث اس کے بازو،  ہاتھ اور جسم کے دیگر دو حصوں پر کل چار بڑے زخم آئے۔ جب کہ سونے سے قبل بھی ان دونوں کے درمیان کوئی لڑائی جھگڑا نہیں ہوا تھا۔ ملزم نے پولیس کو اعترافی بیان میں حملہ کا سبب ساتھی خاتون کے خراٹوں کو قرار دیا۔ پولیس حکام نے نوجوان کو ایمیگریشن قانون کی خلاف ورزی اور اقدام قتل کے الزام کے تحت گرفتار کر لیا ہے۔/سالود 180 

Read More

سپین شاہی خاندان ، عدالتی فیصلہ اور آزادی کا احترام کرتا ہے

Feb 19, 2017

"نووس کرپشن اسکینڈل" کے حتمی فیصلہ میں شاہ سپین فلپے ششم کی ہمشیرہ شہزادی کرستینا کو تمام الزامات سے بری قرار دے دیا گیا ہے۔ جبکہ بہنوئی اردانگرین کو 6 سال 3 ماہ جیل اور 5.12 لاکھ یورو جرمانہ کی سزا سنائی گئی ہے۔ سزا سنائے جانے کے بعد شاہی محل کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق، شاہی محل سپینش عدالتوں کی مکمل آزادی کا احترام کرتا ہے۔ فیصلہ میں شہزادی کرستینا کو نووس فائونڈیشن کا اہم حصہ دار ہونے کے باعث 2.65 لاکھ یورو جرمانہ ادا کرنے کا حکم جاری کیا گیا ہے۔/گیتریس 

Read More

کرپشن الزامات۔ شاہ سپین کے بہنوئی، کو 6 سال 3 ماہ جیل کی سزا، بہن کو جرمانہ

Feb 19, 2017

سپینش جزیرہ نے "نووس کرپشن سکینڈل" میں ملوث ہونے پر شاہ سپین کے بہنوئی 'اردانگرین' کو 6 سال 3 ماہ جیل اور 5.12 لاکھ یورو جرمانہ کی سزا سنا دی ہے۔ جبکہ شاہ سپین کی بہن شہزادی کرستینا کو نووس فائونڈیشن کی حصہ دار ہونے کے باعث 2.65 لاکھ یورو جرمانہ ادا کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ اردانگرین پر نووس فائونڈیشن کے ذریعہ شاہی اثرورسوخ استعمال کرتے ہوئے مختلف ٹھیکے حاصل کرنے کا الزام ثابت ہو گیا ہے۔ بعض اخبارات کے مطابق، سپین کے تمام قیدیوں کو اپنی مرضی کی جیل کا انتخاب کرنے کے حق کے تحت اردانگرین نے باداخوز کی جیل کا انتخاب کیا ہے۔ وہیں دوسری طرف شہزادی کرستینا نے بچوں سمیت باداخوز جیل سے قریب تر پرتگال کے سرحدی قصبہ اپنی رہائش منتقل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔  تاکہ اپنے شوہر کے قریب تر رہ سکیں۔ شہزادی کرستیانا اس وقت سوئٹزرلینڈ کے شہر جینیوا میں مقیم ہیں۔ اخبارات کے مطابق اردانگرین کو جیل میں مشترکہ استعمال کے علاقوں کی صفائی کی ذمہ داریاں سونپی جا سکتی ہیں۔/گوگل میپ 

Read More

سپین۔ 2013؁ کے معاہدہ کے تحت پیشن کی عمر 67 سال ہو گی

Feb 18, 2017

سٹیٹ بینک سپین کے گورنر لویس ماریا کے مطابق اس ہفتہ قومی اسمبلی کا کمیشن 'تولیدو معاہدہ' کے حوالہ سے گفت و شنید کا آغاز کرے گا۔ جس میں پینشن وصول کرنے کی موجودہ حد 65 سال اور 5 ماہ کی عمر کو بڑھا کر 2027 میں 67 سال کرنے کی تجویز زیر غور آئے گی۔ ماہرین کے مطابق اگر پینشن وصول کرنے کیلئے 67 سال عمر کا تعین نہ کیا گیا۔ تو تمام پینشن یافتہ، محکمہ  سوشل سکیورٹی کی جانب سے فراہم کردہ موجود فوائد حاصل نہیں کر پائیں گے۔ ٹریڈ یونینز کے مطابق اگر پینشن وصول کرنے کیلئے عمر کی حد بڑھائی گئی تو جہاں ملک کا سماجی ڈھانچہ متائثر ہو گا۔ وہیں نوجوانوں کے نئی نوکریاں حاصل کرنے میں مزید رکاوٹیں پیدا ہو جائیں گی۔ 2011؁ میں سابق صدر زپاتیرو نے پینشن کی عمر 65 سال اور ایک ماہ متعین کی تھی۔ اور 2027؁ میں اسے بڑھا کر 67 سال کرنے کی تجویز دی گئی تھی۔ یورو سٹاٹ ایجنسی کے مطابق سپین کے 65 سال سے زائد عمر کے نوکری کرنے والے بزرگ شہریوں میں سب سےکم متحرک شہریوں کا ملک بن گیا ہے۔ جہاں 65 سال سے زائد العمر صرف 6.3 ٪ شہری برسر روزگار ہیں۔جبکہ ہنگری میں 6.6۔ فرانس اور بلجیئم میں 8.7، پرتگال 37.8، برطانیہ 34.2، رومانیہ 32.8، سویڈن 31.5 بزرگ برسر روزگار ہیں جبکہ یورپ کی اوسط شرح 18.7 ٪ ہے۔/گیتریس 

Read More

پودیموس پارٹی 24 افراد پر مشتمل سپین کی “شیڈو کابینہ” کا اعلان کردیا

Feb 18, 2017

پودیموس پارٹی سپین کی ایگزیکٹو کمیٹی نے 12 خواتین سمیت 24 افراد پر مشتمل شیڈو کابینہ کا اعلان کر دیا ہے۔ تاکہ حکومت کی پالیسیوں کا تجزیہ کرنے کے ساتھ ساتھ اپنے پارٹی ورکرز کی صحیح سمت میں تربیت کی جاسکے۔ یہ شیڈو کابینہ ہر ماہ میٹنگ کیا کرے گی۔ جس میں نظام حکومت چلانے کیلئے پارٹی کا بہترین لائحہ عمل تیار کیا جا سکے گا۔ تجویز کی منظوری ایگزیکٹو کمیٹی میں 76 ووٹوں کی اکثریت سے منظور کرلی گئی۔ جبکہ 2 ممبران نے غیر جانبداری کا ووٹ دیا۔/ڈون گاگو، پودیموس

Read More

سپین۔ آبے ٹرین کیٹرنگ عملہ 26 فروری سے ہڑتال پر

Feb 18, 2017

سپین کی فاسٹ ٹرین آبے کی سی سی او او سمیت تمام ٹریڈ یونینز سے منسلک ٹریڈ یونینز نے 26 فروری سے 5 مارچ تک ہڑتال پر جانے کا اعلان کر دیا ہے۔ جس کے باعث اندرون ملک سمیت پیرس، تول آئوس، لیون اور مارسیعا جانے والی ٹرینوں میں کیٹرنگ کی سروس معطل رہے گی۔ 1900 ملازمین پر مشتمل کیٹرنگ سروس کیلئے 2013 میں ایک مشترکہ سیلری پیکیج "کومبینو" کا اعلان کیا گیا تھا۔ جو کہ اگلے دو سال مزید یعنی 2019 تک لاگو رہ سکتا تھا۔ ٹریڈ یونینز کے مطابق اب کمپنی نے اس کومبینیو پر مزید عمل درآمد کی بجائے عارضی کومبینیو لانے کا اعلان کیا ہے۔ جو کہ ملازمین کو ناقابل قبول ہے۔ وہیں ٹریڈ یونینز نے 22/20 اور 24 فروری کو کومبینیو کے مذاکراتی کمیشن سے مذاکرات شروع کرنے کا بھی اعلان کیا ہے۔/ای پی 

Read More

آج سپین بھر میں سردی کی نئی لہر کا آغاز

Feb 18, 2017

محکمہ موسمیات سپین نے آج 19 فروری کو ملک بھر میں سردی کی نئی لہر کی پیشین گوئی کی ہے۔ جس میں مالاگا میں 15 لٹر فی مربع میٹر کے حساب سے شدید بارش، اور اندلس، سیوتا اور میلیعا میں بلند سمندری لہروں اور تیز ہوائوں کے باعث انتباہ جاری کیا گیا ہے۔  پیرینویس کے پہاڑی سلسلہ سمیت 1100 میٹر سے بلند پہاڑوں پرشدید برف باری کا بھی امکان ظاہر کیا جارہا ہے۔ جس کے باعث ملک  بھر میں درجہ حرارت گر جائے گا۔/ای پی 

Read More

سپین۔ چیک فامیلیار کےتحت 100 یورو ماہانہ امداد۔ حتمی تاریخ 31 مارچ

Feb 17, 2017

حکومت سپن کی جانب سے "چیک فامیلیار آئی آر پی ایف 2017" امدادی پروگرام کے تحت 100 یورو ماہانہ امداد وصول کی جاسکتی ہے۔ درخواستیں دینے کی حتمی تاریخ 31 مارچ 2017 ہے۔ چیک فامیلیار کون اپلائی کر سکتا ہے؟؟؟

¿Quiénes pueden solicitar el “Cheque Familiar”?

  • Familias numerosas, con al menos 3 hijos o Familias monoparentales con al menos 2 hijos, es decir, un padre o una madre solter@, separad@ o divorciad@, al tiempo que cuentan con 2 hijos menores de 25 años

  • Familia con hijos dependientes con discapacidad superior al 33%.

  • Familia con ascendientes dependientes con discapacidad superior al 33%.

  • Familia numerosa de categoría especial: aquellas con cinco o más hijos o aquellas familias con cuatro hijos, de los que al menos tres sean por parto o adopción múltiple; y aquellas que tengan cuatro hijos y unos ingresos anuales no superiores al 75% del IPREM (en doce pagas esa cantidad es de 4.792,59 euros y en catorce pagas son 5.591,35 euros).

Las madres trabajadoras con hijos menores de 3 años siguen disfrutando de esta deducción bajo las mismas condiciones.

Las deducciones son acumulables para cada una de las situaciones.

De esta forma, una familia con un hijo dependientes con discapacidad superior al 33% y un ascendiente dependiente con ese grado de discapacidad tendrían una bonificación de 2.400 euros al año.

Si dos o más contribuyentes tienen derecho a la aplicación de alguna de las deducciones y hubieran presentado una solicitud de abono anticipado de forma colectiva, se entenderá cedido el derecho a la deducción a favor del primer solicitante, quién deberá consignar en la declaración del impuesto el importe de la deducción y la totalidad del pago anticipado percibido.

امداد وصول کرنے کیلئےدرخواست کیسے دیں؟

Por internet: Por medio del DNI electronico o el Pin24h

  • Por teléfono: Llamando al Centro de Atención Telefónica de la Agencia Estatal de Administración Tributaria en el 901 200 345 y aportando el  importe de la casilla 415 de la declaración del IRPF del año anterior

  • Presencial: en cualquier oficina de la Agencia Tributaria presentando el modelo 143 correctamente rellenado. Una vez impreso lo deben firmar todos los solicitantes.

 مزید تفصیلات کیلئے نیچے دی گئی سرکاری ویب سائٹ کا لنک دبائیں۔ شکریہ ۔ بارسلونا اردو سروس

http://www.agenciatributaria.es/AEAT.internet/Inicio/Ayuda/Modelos__Procedimientos_y_Servicios/Ayuda_Modelo_143/Informacion_general/Preguntas_frecuentes/Preguntas_frecuentes.shtml

Read More

سپین.پاس شدہ فیملی کیس۔ 2 ماہ میں اسلام آباد ایمبیسی میں جمع کروانا لازمی

Feb 17, 2017

ضروری بات۔۔۔۔۔۔۔آپ کا فیملی کیس آ گر یہاں سے پاس ہو چکا ہے۔۔۔تو اسپین ایمبیسی میں اس کیس کی جمع کروانے کی حد دو مینے ہے۔۔۔۔۔۔یاد رہے آپ کے نادرہ میر ج سر ٹیفیکیٹ اور کر یکئر سر ثیفیکیٹ کی حد چھ مہینے ہیں. مزید رہنمائی کیلئے محمد عمران ملک پاک ای کیئر سے رابطہ کریں۔ شکریہ 

Homepage


Read More